مل کے بچھڑے جو تم مٹ گئ ھر خوشی !
آرزؤں ســـارا جہــــــــــــــاں لُـــــٹ گیا !
راس آئی نہ فـــــرقت کســــــی کو صنـم !
تم وھــــــاں لُٹ گئے میں یہـــاں لــٹ گیا !
رات بھــر عاشقـوں نے منائــی خــــوشی !
میــــری تــربت پہ لــوگـــوں کا میـــلـہ لگا !
وہ جــــگـــہ “یــادگـارِ محبـــــت” بنــــی !
میں محبــت کـی خاطـــر جہـــاں لُــٹ گیا !
لے کے ارمــــان کـــعبے کا نکلے تھے ھم !
لے گــیا بت کـــــــــــــدے کو دلِ مضطرب !
ھـــــم کو جانا کہــــــاں تھا،کہـــاں آ گئے ؟
دل کـــو لُٹنـــا کہــاں تھـا ،کہـــاں لُـٹ گیا ؟؟

Visit to Read Books and Articles of Dr. Muhammad Hamidullah

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *