Home / Poetry / ھم بتوں کو جو پیار کرتے ھیں ! ۔ شاعری

ھم بتوں کو جو پیار کرتے ھیں ! ۔ شاعری

ھم بتوں کو جو پیار کرتے ھیں !
نقلِ پروردگار کرتے ھیں ،،،،،،،،، !
اتنی قسمیں نہ کھاؤ گھبرا کر !
جاؤ ھم اعتبار کرتے ھیں !
کیا محبت بھی کوئی پیشہ ہے ؟
لوگ کیوں اتنے پیار کرتے ہیں؟
اب بھی آجاؤ کچھ نہیں بگڑا! !
اب بھی ھم انتظار کرتے ہیں !
دشمنی غیر تو نہیں کرتے !
یہ شرافت تو یار کرتے ہیں !
تو خفا ھو ،، یا خوش ھم تو !
واقعی تجھ سے پیار کرتے ہیں !
خوبیوں کو بھی قدردان عدم !
خامیوں میں شمار کرتے ہیں !

Visit to Read Books and Articles of Dr. Muhammad Hamidullah

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *