Home / Uncategorized / کون کہتا ھے اپنے کام نہیں آتے ؟

کون کہتا ھے اپنے کام نہیں آتے ؟

جوں جوں گنجائش کم ھوتی ھے ، نئے ساتھیوں کا اصرار بڑھتا ھے تو اپنے گاؤں کے سو سوا سو دوستوں میں سے ایک کو ان فرینڈ کر کے ایک دوست کی جگہ بنا لیتا ھوں ،، مشکل وقت میں اپنے سالے کا نام ٹائپ کر کے میوچل فرینڈز میں سے ،آنکھیں بند کر کے دائیں ھاتھ کی شہادت کی انگلی گھما کر رکھ دیتا ھوں ، جس کے نام پہ ٹک جائے ان فرینڈ کر دیتا ھوں ، یوں انصاف کے تقاضے پورے ھو جاتے ھیں -گاؤں والے تو اپنے ھیں ان کے نام بھی یاد ھیں اور کام بھی ،جب کبھی گنجائش نکلی تو پھر انہیں شامل کر لونگا ،،

Visit to Read Books and Articles of Dr. Muhammad Hamidullah

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *