Home / Islam / میرا پیغام محبت ھے جہاں تک پہنچے

میرا پیغام محبت ھے جہاں تک پہنچے

الحمد للہ مجھے کسی مسلک سے عداوت نہیں ،، لہذا کسی سے مسلکی عداوت مجھے اس کے حق سے محروم نہیں کرتی ،، اور کسی مسلک کی محبت مجھے اس کے باطل سے تنقید سے نہیں روکتی ،،، میں سب کے پیچھے نماز پڑھتا ھوں اور سارے مسالک میرے پیچھے نماز پڑھتے ھیں ،، سڑک کنارے جو مسجد نظر آتی ھے گاڑی روک کر نماز پڑھ لیتا ھوں ، مجھے کبھی اپنی مسجد کی تلاش نہیں رھی ،، ھر مسجد میری مسجد ھے ،، ھر کلمہ گو سے محبت کرتا ھوں ،، عقیدے میں سلفیوں کو زیادہ اقرب الی الصواب سمجھتا ھوں ،، فقہی معاملات میں قولِ رسول مل جائے تو وہ پہلی ترجیح ھوتی ھے ،، اگرحدیث کی تاویل کا معاملہ ھو تو امام ابوحنیفہ رحمۃ اللہ کی رائے کو ترجیح دیتا ھوں ،، قرآن سے توحید پائی ھے اس لئے کٹر توحیدی ھوں ، اللہ سے مانگ مانگ کر لینے کا عادی ھوں ،، اسی کی طرف بلاتا ھوں ،،، جہاں سے مجھے ملا ھے ، اسی کا پتہ دیتا ھوں ،،،، ھر مسلک کے کمزور پہلو بخوبی جانتا ھوں اور مثبت پؤائنٹس بھی جانتا ھوں ، اس لئے کسی مسلک کے کسی دوسرے مسلک کے خلاف کمنٹس اچھے نہیں لگتے ،، اگر ایسا کوئی کمنٹ آتا ھے تو ری ایکشن کے طور پہ اس کمنٹ کرنے والے بندے کے مسلک کے سارے پوتڑے نکال کر بیچ چوراھے کے رکھ دیتا ھوں ، اور میرے لمبی لمبی پوسٹیں کسی نہ کسی نفرت انگیز کمنٹ کا ری ایکشن ھوتی ھیں ، ورنہ میں بحث مباحثہ پسند نہیں کرتا ، میں اس دور سے گزر آیا ھوں ، میں نےمناظروں کی تربیت بھی لی ھے اور مناظرے کیئے ھیں ھیں ،،مگر ان سے ملا کچھ نہیں ھے ،،، اس لئے نہیں چاھتا کہ کوئی راکھ میں دبی چنگاری کو پھر سے شعلہ جوالہ بنا دے – ھمیں یاد ھے سب ذرا ذرا ،تمہیں یاد ھو کہ نہ یاد ھو !! میں چاھتا ھوں کہ سارے دوست ھنسی خوشی ،امن و چاشتی کے ماحول میں رہ کر کمنٹس کریں، یہاں کسی کو کافر نہ کہیں ،، جو کافر ھے اسی کی وال پہ جا کر اسے جو کہنا ھے کہہ لیں ،، یا اپنی وال استعمال فرمائیں ،،

Visit to Read Books and Articles of Dr. Muhammad Hamidullah

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *