Home / Islam / انسانیت سے اللہ پاک کا آخری خطاب ! قرآنِ حکیم

انسانیت سے اللہ پاک کا آخری خطاب ! قرآنِ حکیم

اگر ایمان لانا ھر شخص پہ واجب ھے تو پھر اللہ یہ بھی یہ واجب ھے کہ اس کی ایمانیات کے بارے میں دی گئ دلیل ھر شخص کی سمجھ میں آئے ،،،،،،، یہ ناممکن ھے کہ وہ اپنی مخلوق سے کلام کرنا چاھے اور الفاظ اس کا ساتھ چھوڑ جائیں ،،،،،،،،،،،، وہ سمجھانا چاھے مگر انسان کی عقلی سطح کی مثال نہ ڈھونڈ پائے ،،،،،،، یہ الگ بات ھے کہ اس نے کچھ کلام کیا ھی مستقبل کے انسان کی عقلی سطح اور علمی تجربے کے مطابق ھو ،،،، تا کہ اسے وھی سمجھ سکیں جن کی وہ امانت ھے ،،،،،،،، اسی کو اللہ کے رسول ﷺ نے ان الفاظ میں بیان فرمایا ھے کہ علماء اس سے سیر نہیں ھونگے اور اس میں کوئی غوطہ زن موتی لئے بغیر واپس نہیں آئے ،،یہی کتاب اپنے زمانہِ نزول کے حال کے لئے تھی ، یہی کتاب ماضی کی کتابوں پر سچا تبصرہ ھے اور یہی کتاب قیامت کی صبح تک کے انسان کی عقلی سطح کی پیاس بجھا کر اس پر اتمامِ حجت کرے گی ،،،،،،، واعتصموا بحبل اللہ جمیعاً ولا تفرقوا ،،،،،،،،،،،،
ما ھما خاک و دلِ آگاہ اوست !
اعتصامش کُن کہ حبل اللہ اوست !
ھم سب خاک کی مٹھی ھیں ھم سب میں دھڑکتا دل یہی کتاب ھے ،،،
اس کو تھام لو کہ اللہ تک پہنچانے والی رسی یہی ھے ( اقبال )

Visit to Read Books and Articles of Dr. Muhammad Hamidullah

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *