قرآن ایک بکری چرانے والے کی سمجھ میں بھی بہت اچھی طرح آ جاتا ھے، ولقد یسرنا القرآن للذکر فھل من مدکر ؟ ایک بار نہیں بار بار دھرایا گیا ھے ،ھر قوم کی طرف دعوت پھر اس قوم انجام بیان کر کے کہا گیا ھے کہ دعوت میں کوئی ایچ پیچ نہیں تھا سیدھی سادی اور آسان دعوت تھی سمجھنے والے ھی سمجھنا نہیں چاھتے تھے ،، فھل من مدکر ؟ اس سے بڑا مغالطہ کوئی نہیں ھو سکتا کہ کے بغیر قرآن سمجھ نہیں آ سکتا ،، جب کسی کی سمجھ میں نہیں آ سکتا تو اس سے کا تقاضہ کیسے کیا جا سکتا ھے ؟

Visit to Read Books and Articles of Dr. Muhammad Hamidullah

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *